ایک مجلس کی تین طلاق کا مسئلہ

ایک مجلس کی تین طلاق کا مسئلہ

ایک مجلس میں تین طلاق واقع ہوجاتی ہے؟ ؟

ائمہ اربعہ کا کیا مسلک ہے؟

تین طلاق پر ہمارے دلائل کیا ہیں؟

چیلنج ہے

ایک ہی دفعہ یا ایک ہی مجلس کی تین طلاقیں واقع ہو جائیں گی یا ایک ہی شمار ہوں گی؟

اس سلسلہ میں دور فاروقی سے صحابۂ کرام(رضی اللہ عنہم) تابعین و تبع تابعین آئمہ اربعہ:

امام ابو حنیفہ، امام مالک، امام شافعی،امام احمد(رحمہم اللہ تعالی)اور جمہور علماء و محدثین اہل سنت والجماعت کا اجماع ہے کہ تینوں طلاقیں واقع ہو جائیں گی …

چناچہ علامہ ابن ہمام رحمہ اللہ تعالی فرماتے ہیں..

ذھن جمہور الصحابة والتابعین ومن بعدہم من ائمة المسلمین الی انہ یقع ثلاثا ………… لم ینقل عن احد منہم انہ خالف عمر حین امضی الثلاث

(فتح القدیر ۳/۳۳)

علامہ بدر الدین عینی رحمہ اللہ علیہ فرماتے ہیں..

مذھب جماھیر العلماء من التابعین ومن بعدہم: منہم الاوزاعی والنخعی والثوری وابو حنیفہ و اصحابہ ومالک واصحابہ والشافعی واصحابہ واحمد واصحابہ واسحاق ابو ثور ابو عبید وآخرون کثیرون علی ان طلق امرءتہ ثلاثا وقعن

…(عمدة القاري ۸/۵۶۷)

علامہ زرقانی مالکی فرماتے ہیں

والجمہور علی وقوع الثلاث بل حکی ابن عبد البر الاجماع قائلا ان خلافہ شاذ لا یلتفت الیہ

(زرقانی شرح مؤطا ۳/۱۶۷)

علامہ نووی فرماتے ہیں.

قال الشافعی و مالک و ابو حنیفہ و احمد و جماھیر العلماء من السلف والخلف یقع الثلاث..

(شرح نووی علی مسلم ۱/۴۷۸)

مشہور ظاہری محدث امام ابو محمد ابن حزم بھی تین طلاقوں کے وقوع کے قائل ہیں

..(محلی ۱/۲۰۶)

غیر مقلدین کے سرخیل علامہ شوکانی فرماتے ہیں.

ذھب جمھور التابعین وکثیر من الصحابۃ و ائمة المذاھب الاربعة و طائفة من اھل البیت منہم امیر المؤمنین علی……الی ان الطلاق یتبع الطلاق ..

(نیل الاوطار ۶/۲۴۵)

اسی طرح معروف غیر مقلد عالم مولانا شمس الحق صاحب بھی وقوع تین طلاق کے قائل ہے

(عون المعبود ۶/۱۹۹)

علامہ ابن ھمام اور ابن نجیم تحریر فرماتے ہیں…

لاحاجة الی الاشتغال بالادلة علی رد قول من انکر وقوع الثلاث جملة لانہ مخالف للاجماع کما حکاہ فی المعراج ولذا قالوا لو احکم حاکم بان الثلاث بفم واحد واحدة لم ینفذ حکمہ لانہ لا یسوغ الاجتھاد فیہ

(ترجمہ)

جو لوگ ایک ساتھ دی گئی تین طلاق کے واقع ہونے کو تسلیم نہیں کرتے ان کے قول کو دلائل کے ساتھ رد کرنے کی کوئی

ضرورت نہیں اسلئے کہ وہ تو خود ہی اجماع کے خلاف ہے جیسا کہ یہ بات معراج میں مذکور ہے. اسی بنیاد پر

(کہ ایک مجلس کی تین طلاق کے تین شمار ہونے پر اجماع ہے)

علماء نے یہ بات کہی ہے کہ اگر کسی حاکم نے ایک ساتھ دی ہوئی تین طلاق کے بارے میں یہ فیصلہ کردیا کہ وہ ایک ہی ہوئی تو فیصلہ نافذ نہ ہوگا اسلئے کہ اس مسئلہ میں اجتھاد کی کوئی گنجائش نہیں ہے

….(فتح القدیر ۳/۳۳۰ …البحر الرائق ۲/۳۵۷)

(ماخوذ از غیر مقلدین کے اعتراضات حقیقت کے آئینہ میں

مفتی محمد شوکت صاحب قاسمی مد ظلہ

..(۴۶۶ سے ۵۳۲)

نا اھل حدیث جو اس کے منکر ہیں ان کے دلائل کا منھ توڑ جواب دیکر بحث کو دلچسپ بنادے ….

مذکورہ سوال کے جوابات بندہ کے دوسرے تفصیلی مضمون میں ملاحظہ فرمائیں….

العبد محمد عفی عنہ……

تین طلاق کے دلائل

:دلیل نمبر1

قَالَ اللّٰہُ تَعَالٰی: فَاِنْ طَلَّقَھَا فَلاَ تَحِلُّ لَہُ مِنْ بَعْدُ حَتّٰی تَنْکِحَ زَوْجًا غَیْرَہُ۔

(سورۃ بقرۃ:230)

ترجمہ: اگر(کسی نے ) اپنی بیوی کوطلاق دی تو اب (اس وقت تک کے لیے اس کے لیے ) حلال نہیں۔یہاں تک کہ اس خاوند کے علاوہ دوسرے سے نکاح نہ کرلے۔

1: قَالَ الْاِمَامُ مُحَمَّدُ بْنُ اِدْرِیْسَ الشَّافِعِیُّ:وَالْقُرْآنُ یَدُلُّ وَاللّٰہُ اَعْلَمُ عَلٰی اَنَّ مَنْ طَلَّقَ زَوْجَۃً لَّہُ دَخَلَ بِھَا اَوْلَمْ یَدْخُلْ بِھَاثَلَاثًالَمْ تَحِلَّ لَہُ حَتّٰی تَنْکِحَ زَوْجاً غَیْرَہُ۔

(کتاب الام ؛امام محمد بن ادریس الشافعی ج2ص1939)

ترجمہ: امام محمد بن ادریس شافعی رحمہ اللہ فرماتے ہیں:

’’قرآن کریم کاظاہر اس بات پر دلالت کرتا ہے کہ جس شخص نے اپنی بیوی کو تین طلاقیں دے دیں، خواہ اس سے ہمبستری کی ہو یا نہ کی ہو تووہ عورت اس شخص کے لیے حلال نہیں یہاں تک کہ وہ کسی اورمرد سے نکاح نہ کرلے۔‘‘

2: قَالَ الْاِمَامُ اَبُوْبَکْرٍاَحْمَدُ بْنُ الْحُسَیْنِ الْبَیْھَقِیُّ اَخْبَرَنَا اَبُوْزَکَرِیَّا بْنُ اَبِیْ اِسْحَاقَ الْمُزَکِّیُّ اَنَا اَبُوالْحَسَنِ الطَّرَائِفِیُّ نَاعُثْمَانُ بْنُ سَعِیْدٍنَاعَبْدُاللّٰہِ بْنُ صَالِحٍ عَنْ مُعَاوِیَۃَ بْنِ صَالِحٍ عَنْ عَلِیِّ بْنِ اَبِیْ طَلْحَۃَ عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ رَضِیَ اللّٰہُ عَنْہُمَا فِی قَوْلِہٖ تَعَالٰی {فَاِنْ طَلَّقَھَا

فَلاَ تَحِلُّ لَہُ مِنْ بَعْدُ حَتّٰی تَنْکِحَ زَوْجًا غَیْرَہُ} یَقُوْلُ اِنْ طَلَّقَھَا ثَلَاثًا فَلَا تَحِلُّ لَہُ حَتّٰی تَنْکِحَ زَوْجًاغَیْرَہُ
۔

(سنن کبریٰ بیہقی ج7ص376 باب نکاح المطلقۃ ثلاثا)

ترجمہ: حضرت عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہما فرماتے ہیں:

’’اگر کسی نے اپنی بیوی کو تین طلاقیں دے دی ہوں وہ اس کے لیے حلال نہیں حتی کہ وہ کسی اورمرد سے نکاح نہ کرلے۔‘‘

:دلیل نمبر2

قَالَ الْاِمَامُ الْحَافِظُ الْمُحَدِّثُ الْکَبِیْرُ مُحَمَّدُ بْنُ اِسْمٰعِیْلَ الْبُخَارِیُّ حَدَّثَنَا عَبْدُ اللّٰہِ بْنُ یُوْسُفَ قَالَ اَخْبَرَنَا مَالِکٌ عَنِ ابْنِ شِہَابٍ اَنَّ سَھْلَ بْنَ سَعْدٍ السَاعِدِیَّ اَخْبَرَہُ…قَالَ عُوَیْمَرُکَذِبْتُ عَلَیْھَا یَارَسُوْلَ اللّٰہِ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ اِنْ اَمْسَکْتُھَا فَطَلَّقَھَا ثَلاَ ثًا قَبْلَ اَنْ یَّامُرَہُ رَسُوْلُ

اللّٰہِ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ {وَفِیْ رِوَایَۃ ٍ}قَالَ فَطَلَّقَھَاثَلاَثَ تَطْلِیْقَاتٍ عِنْدَ رَسُوْلِ اللّٰہِ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ فَاَنْفَذَہُ رَسُوْلُ اللّٰہِ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ ۔

(صحیح البخاری ج2ص791 باب من اجاز اطلاق الثلاث، سنن ابی داود ج1ص324 باب فی اللعان)

ترجمہ:

حضرت سہل بن سعد الساعدی رضی اللہ عنہ نے خبر دی کہ حضرت عویمر رضی اللہ عنہ نے کہا کہ یارسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم !

اگر میں اس کو اپنے پاس روکوں اور بیوی بناکر رکھوں تو میں نے پھر اس پر جھوٹ کہا پھراس نے آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے حکم صادر فرمانے سے پہلے ہی اس کو تین طلاقیں دے دیں

۔(سنن ابی داود کی روایت میں ہے کہ) اس نے اس کو (یعنی عویمر رضی اللہ عنہ نے اپنی بیوی کو) رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس تین طلاقیں دیں توآپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ان کونافذکردیا۔

:دلیل نمبر3

قَالَ الْاِمَامُ الْحَافِظُ الْمُحَدِّثُ الْکَبِیْرُ مُحَمَّدُ بْنُ اِسْمَاعِیْلَ الْبُخَارِیُّ حَدَّثَنِیْ مُحَمَّدُ بْنُ بَشَّارٍ قَالَ حَدَّثَنَا یَحْیٰ عَنْ عُبَیْدِ اللّٰہِ قَالَ حَدَّثَنَا الْقَاسِمُ بْنُ مُحَمَّدٍ عَنْ عَائِشَۃَاَنَّ رَجُلاً طَلَّقَ اِمْرَأتَہُ ثَلٰثاً فَتَزَوَّجَتْ فَطَلَّقَ فَسُئِلَ النَّبِیُّ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ اَتَحِلُّ لِلْاَوَّلِ؟ قَالَ:لَاحَتّٰی یَذُوْقَ عُسَیْلَتَھَا کَمَا ذَاقَ الْاَوَّلُ۔

(صحیح بخاری ج2ص791باب من اجاز طلاق الثلاث)

ترجمہ: ام المومنین سیدہ عائشہ رضی اللہ عنہا بیان کرتی ہیں کہ ایک شخص نے اپنی بیوی کو تین طلاقیں دے دیں،اُس نے کسی اورمرد سے نکاح کیااور

(ہمبستری سے پہلے)

اسے طلاق دے دی۔نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم سے سوال کیاگیاکہ وہ عورت اپنے پہلے خاوند کے لیے حلال ہے؟

تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:’

’نہیں!جب تک کہ دوسرا خاوند اس سے ہمبستری نہ کرے (اور لطف اندوز نہ ہوجائے ) جیساکہ پہلا خاوند ہوا۔‘‘

دلیل نمبر4

قَالَ الْاِمَامُ الْحَافِظُ عَلِیُّ بْنُ عُمَرَ الدَّارَقُطْنِیُّ نَاعَلِیُّ بْنُ مُحَمَّدِ بْنِ عُبَیْدِ الْحَافِظِ نَامُحَمَّدُ بْنُ شَاذَانَ الْجَوْھَرِیُّ نَامُعَلّٰی بْنُ مَنْصُوْرٍ نَاشُعَیْبُ بْنُ رُزَیْقٍ أنَّ عَطَائَ الْخُرَاسَانِیَّ حَدَّثَھُمْ عَنِ الْحَسَنِ قَالَ نَاعَبْدُاللّٰہِ بْنُ عُمَرَ فَقُلْتُ یَارَسُوْلَ اللّٰہِ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ! رَأیْت لَوْ

اَنِّیْ طَلَّقْتُھَاثَلاَثاً کَانَ یَحِلُّ لِیْ أنْ اُرَاجِعَھَا؟قَالَ لَا کَانَتْ تَبِیْنُ مِنْکَ وَتَکُوْنُ مَعْصِیَۃً۔

(سنن دارقطنی ج4ص20 حدیث نمبر3929)

ترجمہ:

حضرت عبداللہ بن عمر رضی اللہ عنہما نے حیض کی حالت میں اپنی بیوی کو ایک طلاق دے دی پھر ارادہ کیاکہ باقی دوطلاقیں بھی بقیہ دوحیض(یاطہر)

کے وقت دے دیں۔ رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کو اس کی خبرہوئی توآپ صلی اللہ علیہ وسلم نے حضرت عبداللہ بن عمر رضی اللہ عنہما سے فرمایا:

’’تجھے اللہ تعالی نے اس طرح تو حکم نہیں دیا تو نے سنت کی خلاف ورزی کی ہے سنت تویہ ہے کہ جب طہر(پاکی)کازمانہ آئے تو ہر طہرکے وقت اس کوطلاق دے۔ وہ فرماتے ہیں کہ حضور اقدس صلی اللہ علیہ وسلم نے مجھے حکم

دیاکہ تو رجوع کرلے! چنانچہ میں نے رجوع کر لیا پھرآپ صلی اللہ علیہ وسلم نے مجھ سے فرمایا:

’’ جب وہ طہر کے زمانہ میں داخل ہو تو اس کوطلاق دے دینا اورمرضی ہو تو بیوی بناکررکھ لینا ۔ ‘‘ اس پرمیں نے عرض کیا: یارسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم!

یہ تو بتلائیں کہ اگر میں اس کو تین طلاقیں دے دیتا تو کیا میرے لیے حلال ہوتا کہ میں اس کی طرف رجوع کر لیتا؟ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:’’نہیں وہ تجھ سے جدا ہو جاتی اوریہ (کام کرنا ) گناہ ہوتا۔

:دلیل نمبر5

عَنْ اَبِیْ سَلْمَۃَ اَنَّ حَفْصَ بْنَ الْمُغِیْرَۃِ طَلَّقَ اِمْرَأتَہُ فَاطِمَۃَ بِنْتَ قَیْسٍ عَلٰی عَھْدِ رَسُوْلِ اللّٰہِ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ ثَلاَثَ تَطْلِیْقَاتٍ فِیْ کَلِمَۃٍ وَاحِدَۃٍ فَأَبَانَھَامِنْہُ النَّبِیُّ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ وَلَمْ یَبْلُغْنَا أَنَّ النَّبِیَّ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ عَابَ ذٰلِکَ عَلَیْہِ۔

(سنن دارقطنی ج4ص10حدیث نمبر3877)

ترجمہ:

حضرت ابو سلمہ رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ حفص بن مغیرہ رضی اللہ عنہ نے اپنی بیوی فاطمہ بنت قیس رضی اللہ عنہما کو رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے عہد مبارک میں ایک کلمہ کے ساتھ تین طلاقیں دیں تو نبی اکرم صلی اللہ

علیہ وسلم نے اس کی بیوی کو اس سے جدا کردیا اورہم کویہ بات نہیں پہنچی کہ اس وقت سے حضوراقدس صلی اللہ علیہ وسلم نے حضرت حفص بن مغیرہ رضی اللہ عنہ پر کسی قسم کاعیب لگایا ہو(یعنی ناراضگی کا اظہار کیا ہو)۔

:دلیل نمبر6

قَالَ الْاِمَامُ الْحَافِظُ عَلِّیُّ بْنُ عُمَرَ الدَّارَقُطْنِیُّ نَاأَحْمَدُ بْنُ مُحَمَّدِ بْنِ زَیَّادِ الْقَطَّانُ نَااِبْرَاہِیْمُ بْنُ مُحَمَّدِ بْنِ الْھَیْثَمِ صَاحِبُ الطَّعَامِ حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ حُمَیْدٍ نَا سَلْمَۃُ بْنُ الْفَضْلِ عَنْ عَمْرِوبْنِ أبِیْ قَیْسٍ عَنْ اِبْرَاھِیْمَ بْنِ عَبْدِالْأعْلٰی عَنْ سُوَیْدِ بْنِ غَفْلَۃَ قَالَ کَانَتْ عَائِشَۃُ الْخَثْعَمِیَّۃُ

عِنْدَ الْحَسَنِ بْنِ عَلِیِّ بْنِ أَبِیْ طَالِب وَقَالَ لَوْلَاأَنِیْ سَمِعْتُ جَدِّیْ أوْحَدَّثَنِیْ أَبِیْ أَنَّہُ سَمِعَ جَدِّیْ یَقُوْلُ أَیُّمَا رَجُلٍ طَلَّقَ اِمْرَأَتَہُ ثَلاَثاً مُبْھَمَۃً أَوْثَلاَثاً عِنْدَ الْاِقْرَائِ لَمْ تَحِلَّ لَہُ حَتّٰی تَنْکِحَ زَوْجاً غَیْرَہُ ۔

(سنن دارقطنی ج4ص20 حدیث نمبر3927)

ترجمہ: حضرت سوید بن غفلہ رحمہ اللہ فرماتے ہیں:

’’حضرت عائشہ خثعمیہ حضرت حسن بن علی رضی اللہ عنہماکے نکاح میں تھیں

(جب حضرت علی المرتضی رضی اللہ عنہ کو شہید کر دیا گیا اور حضرت حسن بن علی رضی اللہ عنہ کے ہاتھ پر لوگوں نے بیعت کرکے ان کو اپنا خلیفہ منتخب کرلیا اس موقع پر )

انہوں نے آپ رضی اللہ عنہ کوکہا : ’’اے امیر المؤمنین!

آپ کو خلافت مبارک ہواس پر حضرت حسن رضی اللہ عنہ نے فرمایاکہ کیا یہ مبارک باد حضرت علی رضی اللہ عنہ کی شہادت پر ہے؟ تو اس پر خوشی کا اظہارکر رہی ہے ؟ جا!تجھے تین طلاقیں ہیں۔ عدت گزرنے پرحضرت حسن رضی اللہ عنہ نے اس کوبقیہ مہر اور مزیددس ہزار دیے تو وہ جواب میں کہنے لگی کہ طلاق دینے والی جیب سے یہ مال کم ملاہے اس پرحضرت حسن رضی اللہ عنہ رو دیے)

اور فرمایاکہ اگر میں نے اپنے نانا جان حضرت محمد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے یہ نہ سنا ہوتا یا یہ فرمایا کہ مجھے میرے والد حضرت علی رضی اللہ عنہ نے میرے نانا جان کی یہ حدیث اگر نہ سنائی ہوتی کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا:’’جو شخص اپنی بیوی کو ایک دفعہ تین طلاقیں دے دے یاتین طہروں میں تین طلاقیں دے دے تو تو وہ اس کے لیے حلال نہیں ہوتی یہاں تک کہ وہ کسی اورمرد سے نکاح نہ کرے۔ تو میں ضروراس کی طرف رجوع کرلیتا۔‘‘

:دلیل نمبر7

قَالَ الْاِمَامُ الْحَافِظُ الْمُحَدِّثُ عَبْدُالرَّزَّاقِ أَخْبَرَنَا یَحْیَ بْنُ الْعَلاَئِ عَنْ عُبَیْدِ اللّٰہِ بْنِ الْوَلِیْدِ الْعَجَلِیِّ عَنْ اِبْرَاھِیْمَ عَنْ دَاوٗدَ عَنْ عُبَادَۃَ (بن) الصَامِتِ قَالَ: طَلَّقَ جَدِّیْ اِمْرَأۃً لَہُ أَلْفَ تَطْلِیْقَۃً فَانْطَلَقَ أبِیْ اِلٰی رَسُوْلِ اللّٰہِ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ فَذَکَرَلَہُ فَقَالَ النَّبِیُّ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ اَمَااِتَّقٰی اللّٰہَ جَدُّکَ اَمَّا ثَلاَثٌ فَلَہُ وأمَّا تِسْعُ مِائَۃٍ وَسَبْعٌ وَّتِسْعُوْنَ فَعُدْوَانٌ وَظُلْمٌ اِنْ شَائَ اللّٰہُ تَعَالیٰ عَذَّبَہُ وَاِنْ شَائَ غَفَرَلَہُ۔

(مصنف عبدالرزاق ج6ص305باب المطلق ثلاثا)

ترجمہ: حضرت عبادہ بن صامت رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں کہ میرے دادا نے اپنی بیوی کو ہزار طلاقیں دے دیں تو میرے والد نے نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس جا کر اس واقعہ کا ذکرکیا۔آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:’’کیا تیرے والد (والدکوبھی جدکہا جاتا ہے) اللہ تعالیٰ سے نہیں ڈرے اسے صرف تین طلاقوں کاحق ہے اور نو سو ستانوے زیادتی اور ظلم ہیں۔ اگر اللہ تعالیٰ چاہیں تو اس کوعذاب دے دیں اوراگر چاہیں تو معاف کردیں۔‘‘

:دلیل نمبر8

قَالَ الْاِمَامُ الْحَافِظُ الْمُحَدِّثُ ابْنُ اَبِیْ شَیْبَۃَ حَدَّثَنَا أَبُوْبَکْرٍقَالَ نَاعَلِیُّ بْنُ مُسْھِرٍ عَنْ شَقِیْقِ بْنِ أَبِیْ عَبْدِاللّٰہِ عَنْ أَنَسٍ قَالَ کاَنَ عُمَرُ اِذَا اَتیٰ بِرَجُلٍ قَدْ طَلَّقَ اِمْرَأتَہُ ثَلاَثاً فِیْ مَجْلِسٍ أَوْجَعَہُ ضَرْباً وَفَرَّقَ بَیْنَھُمَا۔

(مصنف ابن ابی شیبۃ ج4ص11 باب من کرہ ان یطلق الرجل امرأتہ ثلاثا)

ترجمہ: حضرت انس بن مالک رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں: ’’حضرت عمر رضی اللہ عنہ کے پاس جب کوئی ایسا آدمی لایا جاتا جس نے اپنی بیوی کو ایک مجلس میں تین طلاقیں دی ہوتیں توحضرت عمر رضی اللہ عنہ اس کو سزا دیتے اوران میاں بیوی کے درمیان جدائی کردیتے تھے۔‘‘

:دلیل نمبر9

قَالَ الْاِمَامُ الْحَافِظُ الْمُحَدِّثُ عَبْدُالرَّزَّاقِ عَنْ اِبْرَاھِیْمَ بْنِ مُحَمَّدٍ عَنْ شَرِیْکِ بْنِ أَبِیْ نَمْرٍقَالَ جَائَ رَجُلٌ اِلٰی عَلِیٍّ فَقَالَ اِنِّیْ طَلَّقْتُ اِمْرَأتِیْ عَدَدَ الْعَرْفَجِ۔ قَالَ تَاْخُذْ مِنَ الْعَرْفَجِ ثَلاَثاً وَتَدْعُ سَائِرَہُ۔

(مصنف عبدالرزاق ج6ص306 باب المطلق ثلاثا )

ترجمہ: شریک بن ابی نمر رحمہ اللہ فرماتے ہیں:’’ ایک آدمی حضرت علی المرتضیٰ رضی اللہ عنہ کے پاس آیا اورکہنے لگا کہ میں نے اپنی بیوی کوعر فج درخت کے عدد کے برابر طلاق دی ہے۔ حضرت علی رضی اللہ عنہ نے فرمایا’’ کہ عرفج درخت سے تین کو لے لے اور باقی تمام چھوڑ دے۔‘‘

:دلیل نمبر10

قَالَ الْاِمَامُ الْاَعْظَمُ الْحَافِظُ الْمُحَدِّثُ الْفَقِیْہُ الْکَبِیْرُ أَبُوْحَنِیْفَۃَ نُعْمَانُ بْنُ ثَابِتٍ التَّابِعِیُّ الْکُوْفِیُّ عَنْ عَبْدِاللّٰہِ ْبنِ عَبْدِالرَّحْمٰنِ بْنِ أَبِیْ حُسَیْنٍ عَنْ عُمَرَ بْنِ دِیْناَرٍ عَنْ عَطَائٍ عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ أَنَّہُ أَتَاہُ رَجُلٌ فَقَالَ طَلَّقْتُ اِمرَأتِیْ ثَلاَثًا فَقَالَ عَصَیْتَ رَبَّکَ وَحَرُمَتْ عَلَیْکَ حَتّٰی تَنْکِحَ زَوْجاًغَیْرَکَ۔

(مسند ابی حنیفۃ بروایۃ قاضی ابی یوسف بحوالہ جامع المسانید للخوارزمی ج2ص148)

ترجمہ: حضرت عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہماکے پاس ایک آدمی آ کرکہنے لگامیں نے اپنی بیوی کوتین طلاقیں دی ہیں۔آپ رضی اللہ عنہما نے فرمایا:’’ تو نے اپنے رب کی نافرمانی کی ہے اور تیری بیوی تجھ پر حرام ہوگئی حتی کہ وہ تیرے علاوہ کسی اورمرد سے نکاح کرلے۔‘‘

:تین طلاقوں کے تین واقع ہونے پراجماع امت

1: قَدْ قَالَ الْاِمَامُ أَبُوْبَکْرِ ابْنُ الْمُنْذِرِ النِّیْشَابُوْرِیُّ: وَأجْمَعُوْا عَلٰی أَنَّ الرَّجُلَ اِذَاطَلَّقَ اِمْرَأتَہُ ثَلاَ ثًا أَنَّھَالَاتَحِلُّ لَہُ اِلَّابَعْدَ زَوْجٍ عَلٰی مَا جَائَ بِہٖ حَدِیْثُ النَّبِیِّ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ ثُمَّ قَالَ:أَوْ اَجْمَعُوْاعَلٰی أَنَّہُ اِنْ قَالَ لَھَا أَنْتِ طَالِقٌ ثَلاَثاً اِلَّا ثَلاَثاً اَنَّھَا اُطْلِقَ ثَلاَ ثًا۔

(کتاب الاجماع لابن المنذر ص92)

ترجمہ: امام ابن المنذر رحمہ اللہ نے فرمایا :’’فقہاء اورمحدثین امت نے اس پر اجماع کیا ہے کہ جب مرد اپنی بیوی کوتین طلاقیں دے تو وہ اس کے لیے حلال نہیں رہتی۔ ہاں!

جب وہ دوسرے شوہر سے نکاح کرلے تواب حلال ہو جاتی ہے کیونکہ اس بارے میں نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی حدیث وارد ہوئی ہے ۔ ابن المنذر رحمہ اللہ نے فرمایا:

’’ فقہاء ومحدثین کا اس پر بھی اجماع ہے کہ اگر شوہر نے بیوی کو کہا اَنْتِ طَالِقٌ ثَلَاثاً اِلَّاثَلَاثاً (تجھے تین طلاقیں ہیں مگر تین طلاق) تو تین ہی واقع ہوں گی۔‘‘

2: قَالَ الْاِمَامُ الْحَافِظُ الْمُحَدِّثُ الْفَقِیْہُ أَبُوْجَعْفَرٍ أَحْمَدُ بْنُ مُحَمَّدِ الطَّحَاوِیُّ مَنْ طَلَّقَ اِمْرَأتَہُ ثَلاَثاً فَاَوْقَعَ کُلاًّ فِیْ وَقْتِ الطَّلَاقِ لَزِمَہُ مِنْ ذٰلِکَ…فَخَاطَبَ عُمَرُبِذٰلِکَ النَّاسَ جَمِیْعًا وَفِیْھِمْ أَصْحَابُ رَسُوْلِ اللّٰہِ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ وَرَضِیَ اللّٰہُ عَنْھُمُ الَّذِیْنَ قَدْعَلِمُوْامَاتَقَدَّمَ مِنْ ذٰلِکَ فِیْ زَمَنِ رَسُوْلِ اللّٰہِ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ فَلَمْ یُنْکِرْہُ عَلَیْہِ مِنْھُمْ مُنْکِرٌوَلَمْ یَدْفَعْہُ دَافِعٌ فَکَاَنَّ ذٰلِکَ اَکْبَرُ الْحُجَّۃِ فِیْ نَسْخٍ مَاتَقَدَّمَ مِنْ ذٰلِکَ لِاَنَّہُ لَمَّاکَانَ فِعْلُ اَصْحَابِ رَسُوْلِ اللّٰہِ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ جَمِیْعاً فِعْلاً یَجِبُ بِہِ الْحُجَّۃُ کَانَ کَذٰلِکَ اَیْضاً اِجْمَاعُھُمْ عَلَی الْقَوْلِ اِجْمَاعاً یَجِبُ بِہِ الْحُجَّۃُ۔

(سنن الطحاوی ج2ص34باب الرجل یطلق امرأتہ ثلاثاً معا،ونحوہ فی مسلم ج1 ص477 )

ترجمہ: محدث کبیر امام ابوجعفر طحاوی رحمہ اللہ فرماتے ہیں:

’’جس نے اپنی بیوی کوتین طلاقیں دیں اورتینوں کو طلاق کے وقت واقع بھی کردیاتو اس سے لازم ہو جائیں گی (دلیل اس کی حضرات صحابہ رضی اللہ عنہم کا اجماع ہے کہ)

جب حضرت عمر رضی اللہ عنہ نے تمام لوگوں کو اس چیز کے متعلق خطاب فرمایاکہ تین طلاقیں تین ہی ہوں گی اوران لوگوں میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے صحابی بھی موجود تھے جو حضور علیہ السلام کے عہد مبارک میں اس

معاملہ سے بخوبی واقف تھے لیکن کسی نے بھی حضرت عمر رضی اللہ عنہ کی اس بات کا انکار نہ کیا اورنہ ہی کسی نے اسے رد کیا۔ تو یہ سب سے بڑی دلیل ہے کہ اس سے پہلے جوکچھ معاملہ رہا، منسوخ ہے۔ اس لیے کہ جس طرح

تمام صحابہ رضی اللہ عنہم کا فعل اتنی قوت رکھتا ہے کہ اس سے دلیل پکڑنا واجب ہے اسی طرح حضرات صحابہ رضی اللہ عنہم کاکسی بات پر اجماع کرنا بھی حجت ہے (جیساکہ اس مسئلہ طلاق میں ہے )

3: قَالَ الْاِمَامُ الْحَافِظُ الْمُحَدِّثُ الْمُفَسِّرُ الْقَاضِیُّ ثَنَائُ اللّٰہِ الْعُثْمَانِیُّ فِیْ تَفْسِیْرِ ھٰذِہِ الْآیَۃِ{أَلطَّلاَقُ مَرَّتٰنِ}لَاَنَّ قَوْلَہُ أَلطَّلَاَقُ عَلٰی ھٰذَا التَّاوِیْلِ یُشْمِلُ الطَّلَقَاتِ الثَّلاَثَ اَیْضاً…لٰکِنَّھُمْ اَجْمَعُوْاعَلیٰ اَنَّہُ مَنْ قَالَ لِاِمْرَأتِہِ أَنْتِ طَالِقٌ ثَلاَثاً یَقَعُ ثَلاَثٌ بِالْاِجْمَاعِ ۔

(تفسیر مظہری ج2ص300)

ترجمہ: مفسر قرآن قاضی ثناء اللہ پانی پتی رحمہ اللہ آیت {اَلطَّلَاقُ مَرَّتٰنِ} کی تفسیر میں فرماتے ہیں:’

’اللہ تعالیٰ کا فرمان ’’اَلطَّلَاقُ‘‘اس تفسیر کے مطابق )جو پہلے ذکر کی ہے)

تین طلاقوں کو بھی شامل ہے۔ مزید فرماتے ہیں کہ فقہاء ومحدثین نے اس بات پر اجماع کیاہے کہ جس شخص نے اپنی بیوی کوکہا’’اَنْتِ طَالِقٌ ثَلَاثاً

‘‘(تجھے تین طلاقیں ہیں)

تو بالاجماع تین ہی واقع ہوجائیں گی۔‘‘

مسند احمد اور ابو داؤد کی دو روایت & حدیث رکانہ کا جائزہ اور جواب

اور غیرمقلدین کو چیلنج

1 دلیل:۔

حضرت رکانہؓ نے اپنی بیوی کو طلاق دے دی تھی اور آنحضرت ﷺ نے ارشاد فرمایا کہ اے رکانہ تم رجوع کر لو۔ انہوں نے کہا کہ حضرت !

میں نے تو بیوی کو تین طلاقیں دی ہیں، آنحضرت ﷺ نے فرمایا کہ میں جانتا ہوں تم رجوع کر لو۔

(((ابو داؤد جلد ۱ ص۲۹۷ و سنن الکبرٰی جلد ۷ ص۳۳۹)))

اس روایت سے ثابت ہوا کہ تین طلاقوں کے بعد بھی رجوع ثابت ہے اور یہ بھی ہو سکتا ہے کہ تین طلاقیں بیک وقت واقع نہ ہوں ورنہ رجوع کا کیا معنٰی۔؟

الجواب:۔

اس روایت سے تین طلاقوں کے عدم وقوع پر استدلال صحیح نہیں ہے۔

اولاً۔ اس لئے کہ اس کی سند میں بعض بنی ابی رافع موجود ہیں جو مجہول ہے۔

٭چنانچہ امام نوویؒ فرماتے ہیں کہ رکانہ ؓ کی وہ حدیث جس میں آتا ہے کہ انہوں نے تین طلاقیں دی تھیں وہ حدیث ضعیف ہے کیونکہ اس میں مجہول راوی موجود ہیں۔

(((شرح مسلم جلد ۱ ص۴۷۸)))

٭اور علامہ ابن حزم ؒ فرماتے ہیں کہ بعض بنی ابی رافع مجہول ہیں اور مجہول سند سے حجت قائم نہیں ہو سکتی۔

(((محلی جلد ۱۰ص۱۶۸)))

لہذا اس روایت کی سند ایسی نہیں کہ ا س سے استدلال کیا جا سکے اور خصوصاً حلال و حرام کے مسئلہ میں اور وہ بھی قرآن و حدیث اور جمہور امت کے اجماع کے مقابلہ میں۔ اور یہ مسئلہ بھت ہی نازک ہے جو کہ ایک طرف تو ساری

عمر بدکاری کرنے کا جرم ہے تو دوسری طرف اس بدکاری کو حلال سمجھنے کا جرم جو کہ کفر ہے۔

٭حضرت مولانا خلیل احمد صاحب سہانپویؒ

(المتوفٰی ۱۳۴۶ھ)

فرماتے ہیں کہ مستدرک میں بعض بنی ابی رافع کو تعیین بھی آئی ہے کہ وہ محمد بن عبید اللہ بن ابی رافع تھے۔

(((بذل المجہور جلد ۳ص۶۹) ))

لیکن یہ نہایت ہی ضعیف اور کمزور راوی ہے۔

علامہ ذہبیؒ لکھتے ہیں کہ امام بخاری ؒ نے منکر الحدیث اور امام ابن معین لیس بشیؒ اور امام ابو حاتم ؒ اسکو ضعیف الحدیث اور منکرالحدیث جداً کہتے ہیں۔ امام دارقطنی ؒ فرماتے ہیں کہ وہ متروک ہے .علامہ ذہبیؒ فرماتے ہیں کہ محدثین انکی تضعیف کرتے ہیں کہ وہ نہایت ہی ضعیف اور کمزور راوی ہے۔

(((میزان ص۹۷ج۳، تہذیب التہذیب )))

٭محدث ابن عدیؒ انکو کوفہ کے ”شیعہ“ میں بیان کرتے ہیں۔

(((تہذیب التہذیب ص۳۲۱ ج۹)))

جن کا مذھب یہ ہے کہ وہ تین طلاقوں کو ایک ہی تصور کرتے ہیں، قرآن سنت صحابہ تابعین کو چھوڑ کر) اور ایک اور روایت میں بھی شیعہ راویوں نے گڑ بڑ کی ہے چنانچہ امام دارقطنیؒ فرماتے ہیں کہ جن راویوں نے یہ بیان کیا ہے کہ حضرت عبداللہ ؓ بن عمرؓ نے بجالت حیض اپنی بیوی کو تین طلاقی دی تھیں وہ سب کے سب شیعہ ہیں صحیح روایت یہ ہے کہ انہوں نے صرف ایک ہی طلاق دی تھی۔

(((سنن دارقطنی جلد ۲ ص۴۲۷)))

٭اور امام بخاری فرماتے ہیں کہ جس راوی کے بارے میں میں منکر الحدیث کہوں تو اس سے روایت کرنا جائز نہیں

(((میزان الاعتدال جلد ۱ ص۵ طبقات سبکی جلد ۳ص۹ و تدریب الراوی ص۲۳۵)))

گویا امام بخاری کی تحقیق کے رو سے اس روایت کا بیان کرنا ہی جائز نہیں ہے۔

اور ثانیاً:۔

حضرت رکانہؓ کی صحیح روایت میں بجائے تین طلاق کے بتہ کا لفظ ہے۔ چنانچہ امام ابو داؤد ؒ فرماتے ہیں کہ:۔

حَدَّثَنَا سُلَيْمَانُ بْنُ دَاوُدَ الْعَتَکِيُّ حَدَّثَنَا جَرِيرُ بْنُ حَازِمٍ عَنْ الزُّبَيْرِ بْنِ سَعِيدٍ عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عَلِيِّ بْنِ يَزِيدَ بْنِ رُکَانَةَ عَنْ أَبِيهِ عَنْ جَدِّهِ أَنَّهُ طَلَّقَ امْرَأَتَهُ الْبَتَّةَ فَأَتَی رَسُولُ اللَّهِ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَقَالَ مَا أَرَدْتَ قَالَ وَاحِدَةً قَالَ آللَّهِ قَالَ آللَّهِ قَالَ هُوَ عَلَی مَا أَرَدْتَ قَالَ

أَبُو دَاوُد وَهَذَا أَصَحُّ مِنْ حَدِيثِ ابْنِ جُرَيْجٍ أَنَّ رُکَانَةَ طَلَّقَ امْرَأَتَهُ ثَلَاثًا لِأَنَّهُمْ أَهْلُ بَيْتِهِ وَهُمْ أَعْلَمُ ۔۔۔۔ الخ

” سلیمان بن داؤد، جریر بن حازم، زبیر بن سعید، عبد اللہ، علی بن یزید سے روایت ہے کہ رکانہ نے اپنی بیوی کو طلاق بتہ دی تو وہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے پاس آیا آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے پوچھا تیری نیت کیا تھی؟

بولا ایک طلاق کی آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے پوچھا اللہ کی قسم کھا سکتے ہو؟ اس نے کہا ہاں واللہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا پھر تو وہی ہے جو تیری نیت تھی (یعنی ایک ہی طلاق واقع ہو گی) ابو داؤد ؒ فرماتے ہیںحضرت

رکانہ کی یہ روایت (جس میں بتہ کا لفظ موجود ہے) ابن جریجؒ کی رویت سے زیادہ صحیح ہے جس میں آتا ہے کہ انہوں نے تین طلاقیں دی تھیں کیونکہ بتہ والی حدیث ان کے گھر والے بیان کرتے ہیں اور وہ اس کو زیادہ جانتے ہیں“

۔ (((ابو داؤد جلد ۱ص۳۰۱ وکذا فی سنن الکبریٰ جلد ۷ ص۲۳۹)))

بتہ یعنی ایک ایسا جملہ جس سے نیت ایک طلاق کی بھی ہو سکتی ہے اور تین طلاق کی بھی اس لئے رسول اللہ ﷺ ان سے قسم لے رہے ہیں، تھوڑی سی بھی عقل رکھنے والا شخص سمجھ سکتا ہے کہ قسم کیوں لے رہے ہیں ورنہ ایک ہی

طلاق ہونی تھی تو کہہ دیتے ایک کی نیت ہے یعنی ایک دی ہے تب بھی رجوع کر لو اور اگر تین دیں ہیں تب بھی رجوع کر لو لیکن رسول اللہ ﷺ کو اس بات کا بخوبی علم تھا کہ تین طلاق کے بعد بیوی حرام ہو جاتی ہے ۔ ایسے لفظ سے

اگر ایک کی نیت کی ہے تو ایک واقع اور تین کی نیت کی ہے تو تین واقع ہو جائیں گی۔ یعنی هُوَ عَلَی مَا أَرَدْتَ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا پھر تو وہی ہے جو تیری نیت تھی۔

یعنی کہ یہاں سے بھی اکھٹی تین طلاق کے واقع ہو جانے کا قوی ثبوت مل جاتا ہے لھذا غیرمقلد رافضی ہے پکا۔

اس روایت کو امام ابو داؤد نے وہیں صحیح کہا ہے ۔

وَهَذَا أَصَحُّ مِنْ حَدِيثِ

(((ابو داؤد جلد ۱ص۳۰۱)))

٭ قاضی شوکانی ؒ لکھتے ہیں کہ:۔

”واثبت ماروی فی تصتہ رکانہؓ انہ طلقھا البتہ لاثلاثا“

”حضرت رکانہ ؓ کے واقعہ میں ثابت اور صحیح روایت یہ ہےکہ انہوں نے بتہ طلاق دی تھی نہ کہ تین“

(((نیل الاوطار جلد۶ ص۲۴۶)))

الغرض اس روایت سے تین طلاقوں کا اثبات اور پھر تین کو ایک قرار دینا اور پھر خاوند کو رجوع کا حق دینا ظلم عظیم ہے قرآن کا سنت کا امت مسلمہ کا مذاق ہے۔

اور حلال و حرام کے بنیادی مسئلہ میں ایسی ضعیف و کمزور اور مجمل روایتوں پر اعتماد بھی کب جائز ہے؟ اور پھر وہ بھی صحیح اور صریح روایات اور اجماع امت کے مقابلہ میں۔

غیرمقلدین کی پیش کردہ روایت کے راوی ابن عباسؓ ہیں،

چنانچہ حضرت ابن عباسؓ کی باسند صحیح روایت موجود ہے کہ:۔

”ایک شخص نے حضرت ابن عباسؓ کی خدمت میں حاضر ہو کر یہ سوال کیا کہ میں نے اپنی بیوی کو تین طلاقیں دے دی ہیں، حضرت ابن عباسؓ نے اس پر سکوت اختیار کیا ہم نے یہ خیال کہ شاید وہ اس عورت کو واپس اسے دلانا چاہتے ہیں مگر حضرت ابن عباسؓ نے فرمایا کہ تم خود حماقت کا ارتکاب کرتے ہو اور پھر کہتے ہو ااے ابن عباس ‌!

ابن عباس اے ابن عباسؓ؟ بات یہ ہے کہ جو شخص خدا تعالٰی سے نہ ڈرے تو اس کے لیے کوئی راہ نہیں نکل سکتی جب تم نے اللہ تعالٰی کی نافرمانی کی ہے تو اب تمہارے لیے کوئی گنجائش ہی نہیں تمہاری بیوی اب تم سے بالکل علٰیحدہ ہو چکی ہے۔

(((سنن الکبریٰ جلد ۷ ص۳۳۱)))

اکٹھی تین طلاق دینا گناہ ہے، جیسے یہاں پر اکٹھی تین طلاقیں دی گئیں جس کی وجہ یہ ہےکہ ابن عباسؓ نے کہا تم نے حماقت کا ارتکاب کیا یعنی اکٹھی طلاق دے دیں ہیں جو کہ واقع ہو چکی ہیں، ورنہ نہ تو کبھی ایک طلاق دینے سے گناہ ہے نہ ہی الگ الگ تین طلاق دینے سے یعنی شرعی طریقہ سے۔ لیکن غیرمقلدین کے نزدیک اکھٹی سے تو طلاق واقع تک نہیں ہوتی معاذ اللہ ثم معاذ اللہ ۔

ایک روایت میں اتا ہے کہ ایک شخص نے اپنی بیوی کو سو طلاق دے دی حضرت ابن عباسؓ نے یہ فتویٰ دیا کہ تین طلاقیں واقع ہو چکی ہیں باقی ۹۷ کے ساتھ تم نے اللہ تعالیٰ کی کتاب کے ساتھ مسخرہ کیا ہے۔

(((موطا امام مالک ص۱۹۹ دارقطنی جلد ۲ ص۴۳۰، و طحاوی جلد ۲ ص۳۰، و سنن الکبریٰ جلد ۷ ص۳۳۳)))

اور اس کے علاوہ بھی بے شمار روایات موجود ہیں بفضلہ تعالٰی۔

یہاں پر بھی بالکل واضح ہے کہ اس شخص نے اکھٹی طلاقیں دیں اور وہ بھی ۱۰۰ تین اپنی جگہ واقع ہو گئیں باقی گناہ کبیرہ۔

ایک نظر

٭راوی پر زبردست جرحیں۔

٭ راوی کا خود شیعہ ہونا ۔ اور یہ مذھب شیعوں کا ہے

۔(تین ایک )

٭روایت کرنے والے صحابی ابن عباس ؓ کا اپنا مذھب جو کہ صحیح سند سے ثابت ہے اس کے بلکل مخالف ہے۔

٭محدثین کرام کا اس پر کلام کرنا ۔

٭تین طلاقوں کی جگہ بتہ کے ہونے کا ثبوت۔

٭ امام بخاریؒ اس راوی کو منکر الحدیث کہنا ، اور منکر الحدیث سے رویت لینے کا منع کرنا۔

٭باسند صحیح روایت سے مسلک حق اہل سنت والجماعت کا مذھب ثابت ہونا اور روفض غیرمقلدین کا مذھب کا رد ہونا۔

اب بھی نہ مانیں غیرمقلد تو اللہ آپ کو پکڑے گا ،بس ہم صرف اتنا ہی کہیں گے کہ انگریز سے جو اپ نے اپنی جماعت کا نام اہل حدیث الارٹ کروایا تھا اسے وہ واپس کر دیں۔ شکریہ۔

(ہم غیرمقلد روافض کو کھلا چیلنج دیتے ہیں )

کوئی ایک ہی صحیح صریح غیر معارض حدیث پیش کریں جس میں ایک مجلس کی تین طلاقوں کو تین نہ کہا گیا ہو ایک ہی کہا گیا ہو اور اس روایت کا کوئی راوی شیعہ نہ ہو اور اس روایت کے کسی ایک بھی راوی کا اپنا فتوی اس حدیث کے خلاف نہ ہو۔ صرف ایک حدیث پیش کریں صرف ایک ہی جس میں یہ تین چیزیں نہ ہوں۔ لیکن غیرمقلد روافض میں یہ جرأت کہاں۔

2دلیل:۔

حضرت ابن عباسؓ سے مروی ہے کہ حضرت رکانہ ؓ نے اپنی بیوی کو ایک ہی مجلس میں تین طلاقیں دے دی تھیں جس پر وہ بہت ہی پیشمان ہوئے ، آنحضرت ﷺ نے فرمایا کہ تم نے کس طرح طلاق دی ہے ؟ انہوں نے کہا کہ میں نے ایک مجلس میں تین طلاقیں دی ہیں آنحضرتﷺ نے فرمایا کہ تم رجوع کر لو

۔۔۔۔۔۔ الخ مسند احمد جلد ۱ص۲۶۵ و سنن الکبریٰ جلد ۷ص۳۳۹)

قاضی شوکانی فرماتے ہیں کہ اسکی تخریج امام احمد ؒ اور ابو یعلٰی نے کی ہے اور ماما ابو یعلٰی نے اس کی تصحیح کی ہے

۔ (نیل ص۲۴۶ جلد ۶)

الجواب:۔

یہ روایت ہر گز قابل احتجاج نہیں ہے ۔

اولاً:۔ اس کی سند میں محمد بن اسحاق واقع ہے ۔

٭ امام نسائیؒ فرماتے ہیں کہ وہ قوی نہیں ہے۔

(((ضعفاء صغیر للنسائی ص۵۲)))

٭ امام ابو حاتمؒ فرماتے ہیں کہ ہو ضعیف ہے۔

(((کتاب العلل جلد ۱ص۴۳۳)))

٭ امام دارقطنیؒ فرماتے ہیں کہ ہو قابل احتجاج نہیں محدث سلیمان تمییؒ فرماتے ہیں کہ وہ کذاب تھا ، امام ہشامؒ بن عروہ کہتے ہیں کہ وہ کذاب تھا امام یحیٰ ؒ بن سعید القطان فرماتے ہیں کہ میں گواہی دیتا وہں کہ وہ کذاب ہے۔

(((میزان ص۲۱ ج۳)))

٭ امام مالکؒ فرماتے ہیں کہ ہو دجالوں میں سے ایک دجال تھا ۔

(((تہذیب التہذیب جلد ۹ ص۴۱ و تاریخ بغداد جلد ۱ ص۲۲۳)))

٭ امام مالک نے اس کو کذاب بھی فرمایا ہے۔

(((تاریخ بغداد جلد ۱ ص۲۲۳)))

٭اس پر شیعہ اور قدری ہونے کا الزام بھی ہے۔

(((تقریب ص۲۹۰)))

٭امام خطیب بغدادی ؒ فرماتے ہیں کہ ابن اسحاق کے بارے میں امام مالک ؒ کا کلام مشہور ہے اور حدیث کا علم رکھنے والوں میں سے کسی پر مخفی نہیں ہے۔

(((تاریخ بغداد جلد ۱ ص۳۲۴))

علامہ ذہبی ؒ فرماتے ہیں کہ حلال و حرام کے بارے میں اس سے احتجاج صحیح نہیں ہے۔

(((تذکرہ الحفاظ جلد ۱ص۱۶۳)))

اور یہی ہمارا مذھب ہے ایسے راویوں سے روایت نہیں لی جاسکتی خاص کر احکام میں تو ہرگز ہرگز ہرگز قابل قبول ہی نہیں۔

٭حافظ ابن حجرؒ فرماتے ہیں کہ محمد بن اسحاق سے جب کہ وہ متفرد ہو ا حکام کے بارے میں تو احتجاج نہیں کیا جا سکتا چہ جائیکہ جب وہ اپنے سے ثبت اور ثقہ راویوں کی مخالفت کرتا ہو۔

(((محصلہ الدرایہ ص۱۹۳)))

٭نواب صدیق حسن خان صاحب غیرمقلد ایک سند کی تحقیق جس میں محمد بن اسحاق اتا ہے لکھتے ہیں کہ:۔

”در سندش نیز ہماںمحمد بن اسحاق است و محمد بن اسحاق حجت نیست “۔

(((دلیل الطالب ص۲۳۹)))

یعنی اس کی سند میں محمد بن اسحاق ہے اور یہ حجت نہیں ۔

٭حافظ ابن رشد ؒ فرماتے ہیں کہ ابن اسحاق کی یہ روایت وہم پر مبنی ہے کیونکہ ثقہ راوی یوں روایت کرتے ہیں کہ حضرت رکانہؓ نے اپنی بیوی کو بتہ طلاق دی تھی نہ کہ تین۔

(((ہدایۃ المجتہد جلد ۲ ص۶۱)))

و ثانیاً:۔

اگر تنہا محمد بن اسحاق ہی اس سند کا راوی ہوتا تو اس کے ضعیف اور ناقبل احتجاج ہونے کے لیے یہی کافی تھا مگر غضب تو یہ ہے کہ اس سند میں داؤد بن حصین بھی ہے جو عکرمہؒ سے روایت کرتا ہے ۔

٭امام ابو زرعہؒ فرماتے ہیں کہ وہ ضعیف تھا ۔ اممام سفیان بن عینیہ ؒ فرماتے ہیں کہ ہم اس کی حدیث سے گریز کیا کرتے تھے۔ محدث عباس دوریؒ کہتے ہیں وہ میرے نزدیک ضعیف ہے

(((میزان جلد ۱ص۳۱۷)))

٭ امام ابن حاتم ؒ فرماتے ہیں کہ وہ منکر الحدیث تھا، محدث جوزقانیؒ کہتے ہیں کہ محدثین ان کی حدیظ کو قابل تعریف نہیں سمجھتے تھے۔

(((تہذیب التہذیب جلد ۳ص۱۸۱)))

٭امام علیؒ بن مدینیؒ اور امام ابو داؤد ؒ فرماتے ہیں کہ وہ داؤد بن حصین کی روایت عکرمہ سے منکر ہوتی ہے۔

(((میزان جلد ۱ص۳۱۷)))

اور یہ روایت بھی عکرمہ سے ہے۔

٭حافظ ابن حجرؒ ان سے متعلق یہ فیصلہ دیتے ہیں کہ ثقہ الافی عکرمۃ

(((تقریب ص۱۱۶)))

کہ ہو ثقہ ہے مگر عکرمہ ؒ کی روایت میں وہ ثقہ نہیں ہے۔ اسی لیے امما بیہقیؒ فرماتے ہیں کہ اس اس حدیث سے حجت قائم نہیں ہو سکتی ۔

(((سنن الکبریٰ جلد ۷ ص۳۳۹)))

٭حافظ ابن حجر ؒ فرماتے ہیں کہ یہ حدیث معلول ہے۔

(((تلخیص الجیر ص۲۱۹)))

٭علامہ ذہبیؒ اس روایت کو داؤد بن حصین کے مناکیر میں شمار کرتے ہیں۔

(((میزان جلد ۱ص۳۱۷)))

٭مولانا شمس الحق صاحب عظیم آبادی لکھتے ہیں کہ حافظ ابن القیم نے اس حدیث کو حسن کہا ہے

۔(((تعلیق المغنی جلد ۲ص۳۳۶) )) لیکن مولانا حافظ محمد عبداللہ روپڑی صاحب غیرمقلد فرماتے ہیں کہ مگر ابن قیم کا یہ کہنا ٹھیک نہیں کیونکہ یہ بات ظاہر ہے کہ اسناد کے حسن ہونے سے حدیث اس وقت حسن ہو سکتی ہے جب حدیث

میں کوئی اور عیب نہ ہو اور یہاں اور عیب موجود ہے۔ چنانچہ حافظ ابن حجر ؒ نے اس کو معلول کہا ہے۔ خاص کہ جب امام احمد کا فتویٰ بھی اس کے خلاف ہے تو پھر معلولیت کا شبہ اور پختہ ہوجاتا ہے۔ (((ضمیہ ص

ابن قیم ؒ کو اس پر سخت سزائیں بھی ملیں۔ خود غیرمقلد ین کے گھر کی گواہی ملاحظہ ہو

(((فتاویٰ ثنائیہ جلد ۲ص۲۱۹)))

یہ ہیں وہ روایت جن سے زمانہ حال کے غیرمقلد روافض قرآن و حدیث اور جمہور امت کے اجماع کے مقابلہ میں حرام کو حلال کرنے کا ادھار کھائے بیٹھے ہیں۔اللہ اکبر کبیرہ

الحاصل تین طلاقوں کو ایک قرار دینا اور غیر مدخول بہا کی متفرق طور پر دی گئی تین طلاقوں پر ہت مطلقہ کا حکم چسپاں کرنا نہ رویۃ ثابت ہے اور نہ دریۃ بلکہ یہ نری غلط فہمی ہے اور ہوم کا نتیجہ ہے ۔ ایسی غلطی پہلے کے لوگوں کو بھی ہو جایا کرتی تھی مگر وہ باانصاف اور دیانت دار لوگ تھے اس لیے وہ غلطی پر آگاہ ہونے پر اس کو چھوڑ دیتے تھے۔ مگر آج تو تعصب اور ضد کو چھوڑنا پسند نہیں کیا جاتا ۔ الااماشاء اللہ تعالٰی حضرت محمد بن سیرینؒ فرماتے ہیں کہ مجھےبعض ایسے راویوں نے جن پر مجھے اعتماد اور بھروسہ تھا یہ حدیث سنائی کہ حضرت عبداللہ بن عمرؓ نے اپنی بیوی کو بحالت حیض تین طلاقیں دیدی تھیں اور پھر آنحضرت ﷺ نے انہیں رجوع کرنے کا حکم دیا تھا میں بیس ۲۰ سال تک اسی غلط فہمی کا شکار رہا لیکن بعد کو مجھےے ابو غلاب یونسؓ بن جبیرؒ نے جو نہات ثقہ اور ثبت راوی تھے یہ روایت سنایہ کہ حضرت عبداللہ بن عمرؓ نے اپنی بیوی کو ایک طلاق دی تھی نہ کہ تین اور تین کی نسبت ان کی طرف غلط ہے۔

(((محصلہ مسلم جلد ۱ص۴۷۷ و سنن الکبریٰ ص۳۳۴)))

اس قسم کی غلط فہمی کا واقع ہوجانتاا تو مستعبد امر نہیں مگر دلائل کے بعد اس پر جمہود خالص تعصب ہے ۔ اللہ تعالٰی تمام اہل اسلام کو اس سے محفوظ و مصون رکھے آمین۔

غیرمقلدین کی پیش کردہ روایت ابن عباسؓ سے ہے اور یہ امام احمد بن حنبل نے بھی نقل کی ہے۔

اب دیکھتے ہیں ابن عباسؓ کا مذھب کیا تھا۔

چنانچہ حضرت ابن عباسؓ کی باسند صحیح روایت موجود ہے کہ:۔

”ایک شخص نے حضرت ابن عباسؓ کی خدمت میں حاضر ہو کر یہ سوال کیا کہ میں نے اپنی بیوی کو تین طلاقیں دے دی ہیں، حضرت ابن عباسؓ نے اس پر سکوت اختیار کیا ہم نے یہ خیال کہ شاید وہ اس عورت کو واپس اسے دلانا چاہتے ہیں مگر حضرت ابن عباسؓ نے فرمایا کہ تم خود حماقت کا ارتکاب کرتے ہو اور پھر کہتے ہو ااے ابن عباس ‌!

ابن عباس اے ابن عباسؓ؟ بات یہ ہے کہ جو شخص خدا تعالٰی سے نہ ڈرے تو اس کے لیے کوئی راہ نہیں نکل سکتی جب تم نے اللہ تعالٰی کی نافرمانی کی ہے تو اب تمہارے لیے کوئی گنجائش ہی نہیں تمہاری بیوی اب تم سے بالکل علٰیحدہ ہو چکی ہے۔

(((سنن الکبریٰ جلد ۷ ص۳۳۱)))

اکٹھی تین طلاق دینا گناہ ہے، جیسے یہاں پر اکٹھی تین طلاقیں دی گئیں جس کی وجہ یہ ہےکہ ابن عباسؓ نے کہا تم نے حماقت کا ارتکاب کیا یعنی اکٹھی طلاق دے دیں ہیں جو کہ واقع ہو چکی ہیں، ورنہ نہ تو کبھی ایک طلاق دینے سے گناہ ہے نہ ہی الگ الگ تین طلاق دینے سے یعنی شرعی طریقہ سے۔ لیکن غیرمقلدین کے نزدیک اکھٹی سے تو طلاق واقع تک نہیں ہوتی معاذ اللہ ثم معاذ اللہ جو کہ کھلا کفر ہے۔ اور یہ روایت ہے بھی صحیح۔

حافظ ابن حجرؒ فرماتے ہیں کہ اسناد و صحیح

(((تعلیق المغنی ص۴۳۰)))

٭ایک روایت میں اتا ہے کہ ایک شخص نے اپنی بیوی کو سو طلاق دے دی حضرت ابن عباسؓ نے یہ فتویٰ دیا کہ تین طلاقیں واقع ہو چکی ہیں باقی ۹۷ کے ساتھ تم نے اللہ تعالیٰ کی کتاب کے ساتھ مسخرہ کیا ہے۔

(((موطا امام مالک ص۱۹۹ دارقطنی جلد ۲ ص۴۳۰، و طحاوی جلد ۲ ص۳۰، و سنن الکبریٰ جلد ۷ ص۳۳۳)))

اور اس کے علاوہ بھی بے شمار روایات موجود ہیں بفضلہ تعالٰی۔

اب دیکھتے ہیں خود امام احمد بن حنبلؒ کا مذھب کیا تھا۔

امام احمد بن حنبلؒ فرماتے ہیں کہ:۔

”جس شخص نے ایک ہی کلمہ میں تین طلاقیں دے دیں تو بے شک اس نے جہالت کا ارتکاب کیا مگر اس کی بیوی اسس پر حرام ہو جائے گی اور اس کے لئے وہ کبھی حلال نہیں ہو سکتی جب تک وہ کسی اور مرد سے نکاح نہ کرے“

۔ (کتاب الصلوۃ ص۴۷)

اتنی واضح دلیل سبحان اللہ العظیم

ایک نظر:۔

٭ دونوں راویوں پر محدثین کرامؒ نے کافی تعداد میں جرحین کر رکھی ہیں۔

٭شیعہ اور قدری ہونے کا الزام اور شیعوں کا بھی یہی مذھب ہے۔

٭ احکام میں قوی نہیں ۔

٭روایت کرنے والے صحابی ابن عباس ؓ کا اپنا مذھب جو کہ صحیح سند سے ثابت ہے اس کے بلکل مخالف ہے۔

٭نقل کرنے والے امام احمد بن حنبل کا اپنا مذھب اس سے جد ا ہے۔

٭باسند صحیح روایت سے مسلک حق اہل سنت والجماعت کا مذھب ثابت ہونا اور روفض غیرمقلدین کا مذھب کا رد ہونا۔

اب بھی نہ مانیں غیرمقلد تو اللہ آپ کو پکڑے گا ،بس ہم صرف اتنا ہی کہیں گے کہ انگریز سے جو اپ نے اپنی جماعت کا نام اہل حدیث الارٹ کروایا تھا اسے وہ واپس کر دیں۔ شکریہ۔

(ہم غیرمقلد روافض کو کھلا چیلنج دیتے ہیں )

کوئی ایک ہی صحیح صریح غیر معارض حدیث پیش کریں جس میں ایک مجلس کی تین طلاقوں کو تین نہ کہا گیا ہو ایک ہی کہا گیا ہو اور اس روایت کا کوئی راوی شیعہ نہ ہو اور اس روایت کے کسی ایک بھی راوی کا اپنا فتوی اس حدیث کے خلاف نہ ہو۔ صرف ایک حدیث پیش کریں صرف ایک ہی جس میں یہ تین چیزیں نہ ہوں۔

قیامت تک پیش نہ کر سکیں گے ۔

Adyaan Batilah Aqaaid Bidaat or Rasme Dawah & Tableeg Gumrah Firqe Hadith & Sunnah Quran e Kareem Taqleed or Masalik
tik tok in muslim tik tok in islam tik tok muslim girl tik tok muslim song tik tok videos muslim tik tok anak muslim tik tok syubbanul muslimin tik tok muslimah tik tok muslimah romantis
टिकटोक एक बढ़ता नासूर
पर्दे की हकीकत पर्दे की हकीकत पर्दे के डिजाइन पर्दे के पीछे पर्दे में रहने दो पर्दे बनाने की विधि पर्दे आपके दरवाजे पर्दे के पीछे पिक्चर पर्दे का डिजाइन पर्दे पर शायरी पर्दे का कलर पर्दे का भजन पर्दे लगाने का तरीका पर्दे के पीछे एकांकी पर्दे की रॉड पर्दे का नाटक पर्दे गिरा दो पर्दे की रानी पर्दे के बारे में वर्दी वाला गाना पर्दे का बयान परदे की डिजाइन ajnabee पर्दे bulandi पर्दे bewafaa पर्दे curtain पर्दे पर्दा curtain पर्दा convert in english पर्दा dj सॉन्ग dil पर्दे पर्दा डिजाइन पर्दा design पर्दा dj रीमिक्स सॉन्ग dosti पर्दे का डिजाइन पर्दा dj सॉन्ग वीडियो
पर्दे की हकीकत
वसवसे की बीमारी और उसका इलाज unease suspicion uneasy feeling temptation uneasy feeling unease suspicion apprehension temptation meaning temptation chocolate temptation meaning in hindi temptation meaning in gujarati temptation perfume uneasy feeling in stomach uneasy feeling in throat uneasy feeling in chest uneasy feeling in head uneasy feeling after eating uneasy feeling in abdomen uneasy feeling after peeing uneasy feeling around heart uneasy feeling around someone uneasy feeling at 36 weeks pregnant unease suspicion uneasy feeling in stomach uneasy feeling in throat uneasy feeling in chest uneasy feeling in head uneasy feeling after eating uneasy feeling in abdomen uneasy feeling in brain uneasy feeling in scrotum uneasy feeling in knee uneasy feeling in back uneasy feeling in stomach after drinking uneasy feeling at night uneasy feeling in upper back uneasy feeling in house uneasy feeling meaning uneasy feeling in lungs uneasy feeling in love uneasy feeling in left hand uneasy feeling during pregnancy uneasy feeling in lower left abdomen
वसवसे की बीमारी और उसका इलाज
Ahkame Maiyat Hajj & Umrah Jumuah & Eid Prayers Namaz Qasam aur Kaffara Qurbani Sawm Taharah (purity) Waqf Masjid Madrasa Zakat & Charity
جو نماز کراہت کے ساتھ ادا کی گئی، اس کا حکم
جو نماز کراہت کے ساتھ ادا کی گئی، اس کا حکم
Jin jagaho par namazo k awqat na aaye namaz namaz rakat namaz ka tarika namaz time namaz status namaz ki dua namaz time table namaz ki surat namaz video namaz time surat namaz janaza namaz quotes namaz ka tarika pdf namaz in hindi namaz dua namaz ki niyat namaz ka bayan namaz ke ahkam namaz e janaza tarika namaz chart namaz shayari namaz aur niyaz namaz ada namaz and dua book namaz audio namaz azan namaz asar namaz app namaz aur science namaz and science namaz aligarh namaz all surah namaz at kumbhalgarh namaz asan namaz after fajr namaz aur medical science namaz and yoga namaz asr namaz a janaza namaz all dua namaz ada karna namaz book in gujarati namaz bayan namaz benefits namaz book namaz ban namaz bangla namaz batao namaz book in hindi namaz baad ki dua namaz ban in up namaz bataiye namaz baad dua namaz banned in noida namaz before going to exam namaz bataye namaz benefits images namaz boy namaz baad namaz ban in china namaz beautiful namaz cap namaz chair namaz cap buy online namaz carpet namaz chodne ka bayan namaz cartoon namaz clock namaz chast namaz chart 2019 namaz cloth namaz clipart namaz cap png namaz chart in urdu namaz chodne ka azab namaz card namaz calendar namaz college namaz call namaz caption namaz direction namaz dp namaz dua pdf namaz duration namaz download namaz details namaz definition namaz dress namaz dpz namaz dua in english namaz dupatta namaz dikhaye namaz drawing namaz during periods namaz dua surah namaz diary namaz during travelling namaz dress for ladies namaz day namaz e janaza namaz e shab namaz e janaza ki dua namaz e isha namaz e hajat namaz e juma namaz e maghrib namaz e janaza tarika hindi namaz e nabvi namaz e ashura namaz e tauba namaz e ishq namaz e jumma namaz e janaza ki niyat namaz e janaza ka tarika namaz eid namaz e nabvi pdf urdu namaz english namaz e janaza in english namaz farz namaz fajr namaz full namaz film namaz for women namaz funny namaz fazilat namaz for hajat namaz friday namaz five times namaz full dua namaz full video namaz fajr ki namaz for success namaz for health namaz for travellers namaz for parents namaz fb namaz facing namaz full hd namaz girl namaz guide namaz gujarati namaz ground namaz gana namaz girl pic namaz game namaz gif namaz gana video namaz guide pdf namaz gurgaon namaz google namaz gate namaz girl dp namaz geet namaz gurinchi telugulo namaz gujarati pdf namaz gujarati ma namaz girl images namaz girl pictures
Jin Jagaho Par Namazo k Awqat na Aaye !
عصركا وقت عصر جدید قسمت 18 عصر جدید عصر حاضر عصر کا وقت عصر النهضة عصر ایران عصری تعلیم عصر meaning عصر الحديث عصر الجاهلية عصری مسائل عصر جدید قسمت اول عصر النهضة العربية عصر العباسي عصر انتظار عصری تعلیم اور اسلام عصر دانلود عصر الأموي عصری علوم کی ضرورت عصری تعلیم کی ضرورت عصر كا وقت
عصر كا وقت
Dusrei Maamlat Interest & Insurance Penal Code Shares & Investments Tijarat (Business) Wirasat or Wasiyyat
महिलाओं के साथ बलात्कार की रोकथाम बलातकार केस बलातकार की ताजा खबर रेफ फोटो rep 2018 rape बलात्कार rape statistics rape victim news rape statistics in gujarat rape crisis center rape victim quotes in hindi rape statistics rape victim news rape statistics in gujarat rape crisis center rape victim quotes in hindi rapé effects rape helpline number rape hotline volunteer rape hotline orange county ca rape helplines rape help center rape helpline scotland rape helpline victoria rape helpline online rape help ireland
महिलाओं के साथ बलात्कार की रोकथाम
Sher Market me Investment ki Sharte Sher Market Investment muslim Sher Market me Investment ki Sharte share market investment share market investment tips share market investment app share market investment in hindi share market investment calculator share market investment company list share market investment app india share market investment courses share market investment company share market investment plans share market investment types share market investment learning share market investment quora share market investment ideas share market investment india share market investment good or bad share market investment brokers share market investment tutorial share market investment benefits share market investment knowledge share market investment advisor share market investment and profit share market investment advice share market investment advice in hindi share market investment pros and cons share market investment books share market investment beginners share market investment basics pdf share market investment basic knowledge share market investment blogs share market investment basics india investment banking market share share market investment for beginners pdf best share market investment share market investment for beginners in india pdf share market investment for beginners in sri lanka share market investment hdfc bank share market investment in bangladesh share market investment in bangalore share market investment sbi bank share market investment for beginners in hindi best share market investment in india investment banking ranking market share share market investment classes share market investment canada share market investment.com share market investment in chennai investment consultant market share share market investment in islam share market investment in islam
Sher Market me Investment ki Sharte
car loan sbi car loan eligibility car loan india car loan axis bank car loans interest rates hdfc car loan car loan emi calculator sbi car loan emi calculator buying car on installment in islam car leasing halal or haram sharia car finance how to buy a car Islamically islamic car loan india is apr halal is finance haram in islam islamic finance cars london car loan in islam car loan car loan in islamic banking car loan in islamabad car financing in islam car financing in islamic banking vehicle loan in islam car loan in dubai islamic bank car loan in bangladesh islami bank car loan in emirates islamic bank car loan islamic vs conventional car loan islamqa car loan islami bank car loan islamic malaysia car loan islamic bank uae car loan islamic uae car loan in abu dhabi islamic bank car loan sharjah islamic bank car loan cimb islamic car loan calculator islamic car loan calculator islamic bank car loan bank islam graduate car loan allowed in islam islamic car loans in australia car loan bank islam interest rate auto loan in dubai islamic bank car loan noor islamic bank car financing islamic bank pakistan car loan interest bank islam car loan rate bank islam vehicle loan bank islam car loan uae dubai islamic bank car financing through islamic banking car loan muslim commercial bank car loan interest rate in dubai islamic bank car loan calculator dubai islamic bank car loan from islamic bank car loan is haram in islam islamic car loan in india is car loan allowed in islam is car loan permissible in islam car loan maybank islamic car financing maybank islamic car loan halal or haram buying car on loan in islam
Loan pe Car Lena
Akhlaq or Aadab Aurato ke Masail Clothing & Lifestyle Food & Drinks Nikah Talaq (divorce) Taleem or Trbiyat
Qurane karim ke khatam par ustad ko tohfa dena
Qurane Karim ke Khatam par Ustad ko Tohfa Dena
Masjid me ladkiyo ko taleem dena
Masjid me Ladkiyo ko Taleem Dena
Fatwa ka kaam karne walo ko nasihat
Fatwa ka Kaam Karne Walo ko Nasihat
Dua Halal & Haram History & Biography International Relations Khwab ki Tabeer Others Tasawwuf
tik tok in muslim tik tok in islam tik tok muslim girl tik tok muslim song tik tok videos muslim tik tok anak muslim tik tok syubbanul muslimin tik tok muslimah tik tok muslimah romantis
टिकटोक एक बढ़ता नासूर
औरतों के लिए गहनों के इस्तेमाल का हुक्म islamic jewelry islamic jewelry wholesale islamic jewelry history wearing artificial jewellery in islam islamic necklace amazon traditional arabic jewellery islamic pendant arabic jewellery uk islamic jewelry islamic jewelry wholesale islamic jewelry rules islamic jewelry history islamic jewelry mens islamic jewelry store islamic jewelry in the metropolitan museum of art islamic jewelry uk islamic jewelry toronto islamic jewelry for babies islamic jewelry amazon islamic jewelry box islamic jewelry for him islamic jewelry gold islamic jewelry london islamic jewelry cape town islamic jewelry stores in nyc islamic jewelry necklace islamic jewelry houston islamic jewelry silver aliexpress islamic jewelry islamic art jewelry ancient islamic jewelry antique islamic jewelry arabic islamic jewelry
औरतों के लिए गहनों के इस्तेमाल का हुक्म
औरतों का मैकअप makeup muslim makeup muslim muslim makeup artist muslim makeup brands muslim makeup images muslim makeup tips muslim makeup tutorial muslim makeup videos muslim makeup rules muslim makeup artist in delhi muslim makeup games muslim makeup products muslim makeup artist disney muslim makeup artist in mumbai muslim makeup bridal muslim makeup look muslim makeup artist singapore muslim makeup artist in bangalore muslim makeup artist durban muslim makeup artist london muslim makeup artist snapchat muslim makeup artist birmingham best muslim makeup artist muslim and makeup muslim makeup bloggers makeup pengantin muslim bandung eye makeup muslim bride muslim bridal makeup pictures muslim bridal makeup images muslim bridal makeup in kerala muslim bridal makeup videos muslim bride makeup image muslim bridal makeup with hijab muslim bridal makeup step by step muslim bridal makeup and hairstyle muslim bridal makeup tutorial muslim bridal makeup artist in kolkata muslim bridal makeup pics bridal makeup muslim wedding muslim bridal makeup artist muslim bridal makeup photos muslim dulhan makeup muslim dulhan makeup images muslim eye makeup muslim engagement makeup muslim eye makeup tutorial
औरतों का मैकअप
Man pasand Rishte ke liye Wazifa
Exam me Kamyabi (pass) hone ke liye Wazifa
Exam me Kamyabi (pass) hone ke liye Wazifa
Rishta Aane ke Bawujud Rishta Nahi hota ho to
Rishta Aane ke Bawujud Rishta Nahi hota ho to?
Shohar ke Gusse ko Dur karne or uski Mohabbat or ulfat me khub izafa ho uska Aasan Tariqa
Shohar ke Gusse ko Dur karne or uski Mohabbat or ulfat me khub izafa ho uska Aasan Tariqa
3 TALAQ QURAN OR HADEES KI ROSHNI ME 3 TALAQ QURAN OR HADEES KI ROSHNI ME 3 talaq 3 talaq bill 3 talaq news in hindi 3 talaq ka 3 talaq news update 3 talaq judgement 3 talaq ka bayan 3 talaq ka kya matlab hai 3 talaq in pakistan 3 talaq ka samachar 3 talaq essay in hindi 3 talaq verdict 3 talaq ordinance 3 talaq ka gana 3 talaq today news 3 talaq hindi 3 talaq law 3 talaq kanoon 3 talaq ka niyam 3 talaq bill in hindi 3 talaq ki saja 3 talaq act 3 talaq at one time 3 talaq aik sath 3 talaq and halala 3 talaq amendment 3 talaq aur halala 3 talaq aaj tak 3 talaq and halala in hindi 3 talaq advantages 3 talaq the hindu 3 talaq in anger 3 talaq in saudi arabia talaq 3 times anger about 3 talaq in hindi after 3 talaq 3 talaq supreme court ka aadesh about 3 talaq bill talaq after 3 months 3 talaq bill passed 3 talaq banned countries list 3 talaq by mufti tariq masood 3 talaq by maulana tariq jameel 3 talaq banned in india 3 talaq banned 3 talaq bill pdf 3 talaq ban in pakistan 3 talaq bill in india 3 talaq breaking news in hindi 3 talaq books 3 talaq bjp 3 bar talaq 3 talaq k baad ruju 3 talaq ke baad 3 talaq ka bill 3 talaq ke bare me 3 talaq judgement by supreme court 3 talaq bill 3 talaq news in hindi 3 talaq ka 3 talaq news update 3 talaq judgement 3 talaq ka bayan 3 talaq ka kya matlab hai 3 talaq in pakistan 3 talaq ka samachar 3 talaq essay in hindi 3 talaq verdict 3 talaq ordinance 3 talaq ka gana 3 talaq today news 3 talaq hindi 3 talaq law 3 talaq kanoon 3 talaq ka niyam 3 talaq bill in hindi 3 talaq ki saja 3 talaq act 3 talaq at one time 3 talaq aik sath 3 talaq and halala 3 talaq amendment 3 talaq aur halala 3 talaq aaj tak 3 talaq and halala in hindi 3 talaq advantages 3 talaq the hindu 3 talaq in anger 3 talaq in saudi arabia talaq 3 times anger about 3 talaq in hindi after 3 talaq 3 talaq supreme court ka aadesh about 3 talaq bill talaq after 3 months
3 Talaq Quran or Hadees ki Roshni me
Zalzale Tanbih or Nasihat earthquake indonesia indonesia indonesia tsunami indonesia tsunami 2018 video indonesia currency indonesia news indonesia time indonesia bali indonesia tsunami video indonesia tsunami today indonesia map indonesia population indonesia volcano indonesia religion indonesia language indonesia tsunami news indonesia to english indonesia city indonesia rupees indonesia news today live indonesia tourism indonesian rupiah indonesia airport indonesia area indonesia airlines indonesia air ticket indonesia air crash indonesia and india indonesia and thailand indonesia airport code indonesia and india currency indonesia airasia indonesia a4 copy paper manufacturers indonesia and malaysia indonesia a4 paper manufacturer indonesia all city name indonesia area code indonesia a4 paper indonesia amazon indonesia army indonesia actor indonesia address indonesia bhukamp indonesia band tsunami indonesia bali photos indonesia bali tsunami indonesia breaking news indonesia bali currency indonesia best places indonesia business visa indonesia band 17 indonesia bali tapu indonesia beaches indonesia bus simulator indonesia bali package indonesia business directory indonesia bali time indonesia bank indonesia band tsunami video indonesia bp indonesia best city indonesia capital indonesia currency image indonesia country code indonesia currency in indian currency indonesia currency to inr indonesia currency price indonesia current news indonesia currency name indonesia cyclone indonesia currency 20000 indonesia city name indonesia coal indonesia cyclone 2018 indonesia continent indonesia concert tsunami indonesia coal price indonesia currency to dollar indonesia currency photo earthquake indonesia bali earthquake indonesia september 2018 earthquake indonesia today news earthquake indonesia 2004 earthquake indonesia video earthquake indonesia bali today earthquake indonesia 2018 bali earthquake indonesia lombok earthquake indonesia jakarta earthquake indonesia sulawesi earthquake indonesia wiki earthquake indonesia youtube earthquake indonesia epicenter earthquake indonesia tsunami earthquake indonesia tsunami 2018 earthquake indonesia today earthquake indonesia tsunami warning earthquake indonesia 2018 live earthquake indonesia prediction earthquake indonesia 2018 tsunami warning earthquake indonesia august 2018 earthquake indonesia abc earthquake indonesia airport earthquake indonesia article earthquake indonesia aftershocks earthquake indonesia app earthquake indonesia and tsunami earthquake indonesia air traffic controller earthquake indonesia aid earthquake indonesia abc news earthquake indonesia affected areas earthquake indonesia alerts earthquake indonesia atc earthquake indonesia area earthquake indonesia affect bali earthquake indonesia august 2017 earthquake indonesia august earthquake indonesia august 5 earthquake indonesia australia earthquake indonesia ambon earthquake indonesia bbc earthquake indonesia bmkg earthquake indonesia before and after earthquake indonesia bulukumba earthquake indonesia breaking news earthquake indonesia before and after pictures earthquake indonesia bridge earthquake indonesia bandung earthquake indonesia boeing 737 earthquake indonesia banten earthquake indonesia borneo earthquake indonesia bogor earthquake indonesia balikpapan earthquake indonesia buildings indonesia earthquake belt indonesia earthquake boxing day indonesia earthquake banda aceh earthquake balukumbar indonesia
Zalzale, Tanbih or Nasihat
पर्दे की हकीकत पर्दे की हकीकत पर्दे के डिजाइन पर्दे के पीछे पर्दे में रहने दो पर्दे बनाने की विधि पर्दे आपके दरवाजे पर्दे के पीछे पिक्चर पर्दे का डिजाइन पर्दे पर शायरी पर्दे का कलर पर्दे का भजन पर्दे लगाने का तरीका पर्दे के पीछे एकांकी पर्दे की रॉड पर्दे का नाटक पर्दे गिरा दो पर्दे की रानी पर्दे के बारे में वर्दी वाला गाना पर्दे का बयान परदे की डिजाइन ajnabee पर्दे bulandi पर्दे bewafaa पर्दे curtain पर्दे पर्दा curtain पर्दा convert in english पर्दा dj सॉन्ग dil पर्दे पर्दा डिजाइन पर्दा design पर्दा dj रीमिक्स सॉन्ग dosti पर्दे का डिजाइन पर्दा dj सॉन्ग वीडियो
पर्दे की हकीकत
क़ुस्तुंतुनिया पर सुल्तान मुहम्मद फ़ातिह द्वितीय का चमत्कारिक ऐतिहासिक विजय! कुस्तुनतुनिया इतिहास क़ुस्तुंतुनिया सुल्तान मुहम्मद फ़ातिह सुलतान मोहम्मद फ़ातेह सुल्तान मुहम्मद अल फ़ातिह सुल्तान मुहम्मद अल फतेह कुस्तुनतुनिया कुस्तुनतुनिया का पतन कुस्तुनतुनिया का इतिहास कुस्तुनतुनिया इन मैप कुस्तुनतुनिया map कुस्तुनतुनिया इतिहास कुस्तुनतुनिया का नया नाम कुस्तुनतुनिया की संधि कुस्तुनतुनिया on map
क़ुस्तुंतुनिया पर सुल्तान मुहम्मद फ़ातिह द्वितीय का चमत्कारिक ऐतिहासिक विजय!